انبیاء کرام علیہم الصلوۃ والسلام: 6 قسط

نبوت کیاہے: (گزشتہ سے پیوستہ)

#سوال: بتائیے علماء ومفسرین نے معجزے کی کیا تعریف بیان کی ہے؟

#جواب: بعض علماء کے بقول جو امر بلا اسباب خلاف عادت نبی کے ہاتھ پر طاہر ہو وہ معجزہ کہلاتا ہے۔ اسی طرح کوئی اسباب اور آلات کے ذریعہ ظاہر ہو وہ بھی معجزہ نہیں کہلاتی۔ اس طرح جادو اور طلسم کے ذریعے کرشموں کا اظہار بھی معجزہ نہیں۔ بعض علماء معجزے کی تعریف میں کہتےہیں کہ علامت اور جس شے کی علامت مقرر ہو اس کے درمیان کوئی خاص خصوصیت ہونی چاہیئے تاکہ اس علامت کو دیکھ کر فوراً اس دوسری شے کا یقین حاصل ہوسکے۔ منطق کی اصطلاح میں ایسی علامت کا نام خاصہ ہے۔ ضروری ہےکہ نبوت ورسالت اور ان کی علامات وآیات کے درمیان بھی ایسا کوئی خاص ربط ہو جس کو دیکھ کر ایک مادہ پرست کےلیے بھی نبوت ورسالت کی معرفت کا دروازہ کھل جائے۔ انبیاء(کرام علیہم الصلوٰۃ والسلام) سے جو خوارق عادت افعال ظاہر ہوتےہیں علم کلام کی اصطلاح میں انہیں معجزہ کہا گیاہے۔ (المفردات۔ النبوات۔ اسلام کا تصور نبوت)

#سوال: امام قرطبی نے معجزے کی کیا تعریف فرمائی ہے اور اس کے لیے کیا شرائط بیان کی ہیں؟

#جواب: امام قرطبی کہتےہیں کہ,, معجزے کو اس لئے معجزہ کہتےہیں کہ انسان اس کی مثل لانے سے قاصر ہے۔ معجزہ کےلئے آپ نے پانچ شرائط بیان کی ہیں۔

  1. پہلی شرط یہ ہےکہ وہ فعل اس جنس کا ہو جس پر اللہ تعالیٰ کے سوا اور کسی کو قدرت حاصل نہ ہو۔
  2. دوسری شرط یہ ہےکہ وہ فعل خارق عادت ہو۔
  3. تیسری شرط یہ ہےکہ مدعی نبوت اس کے ساتھ یہ دعویٰ بھی کرے کہ الله تعالیٰ اس کے کہنے پر یہ معجزہ دکھلائے گا۔
  4. چوتھی شرط یہ ہیکہ وہ معجزہ مدعی نبوت کے دعویٰ کی تائید بھی کرے کہ میرے دعویٰ نبوت کی دلیل کی طور پر میرا ہاتھ یا یہ جانور بولنے لگےگا۔
  5. پانچویں شرط یہ ہےکہ مدعی نبوت کے مقابلے میں کوئی دوسرا شخص اس کی مثل بہ لاسکے۔ (تفسیر قرطبی۔ المواہب اللاینہ)

#سوال: بتائیے بعض دوسرے مفسرین ومؤرخین نے معجزہ کی کیا تعریف بیان کی ہے؟

#جواب: حافظ ابن حجر عسقلانی کہتےہیں:,, معجزہ کو معجزہ اس لیے کہاجاتاہے کہ جن کے سامنے وہ پیش کیا جاتاہے۔ وہ مخلوق اس کے کرنے سے عاجز ہوتی ہے۔ جیسے مُردوں کا زندہ کرنا۔ لاٹھی کا سانپ بنا دینا۔ انگلیوں سے پانی ابلنا۔ چاند کا پھٹ جانا۔ امام عبدالوہاب شعرانی۔ علامہ ابن ابی شریف اور علامہ ابن خلدون نے بھی ایسی ہی بات کہی ہے۔ (فتح الباری۔ الشفاء الیواقیت والجواہر۔ المساہرہ۔ المقدمہ۔)

جاری قسط نمبر 7

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.